راولپنڈی کے سی سی پی او نے پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے خلاف درخواست پر لاہور ہائیکورٹ میں معافی مانگ لی

لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ۔  - LHC کی ویب سائٹ
لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ۔ – LHC کی ویب سائٹ

راولپنڈی کیپیٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) نے بدھ کے روز پی ٹی آئی کے دھرنوں کے خلاف کیس میں سی سی پی او کی جانب سے گزشتہ سماعت پر پیش کی گئی میڈیکل رپورٹ پر اعتراض کے بعد لاہور ہائی کورٹ (ایل ایچ سی) سے معافی مانگ لی۔

جسٹس مرزا وقاص رؤف نے پی ٹی آئی کے جاری لانگ مارچ کو فوری طور پر روکنے کے لیے درخواست کی سماعت کی۔ بدھ کو راولپنڈی کے ڈپٹی کمشنر کیپٹن شعیب، چیف پولیس آفیسر شہزاد بخاری اور دیگر حکام عدالت میں پیش ہوئے۔

سماعت کے دوران عدالت نے گزشتہ سماعت پر سی سی پی او راولپنڈی کی عدم حاضری کی وجہ کے طور پر جمع کرائی گئی میڈیکل رپورٹ پر اعتراض اٹھایا۔

عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ "میڈیکل رپورٹ میں کسی بھی طرح سے ان کی غیر حاضری کی کوئی وجہ نہیں ہے،” انہوں نے مزید کہا کہ اگر اہلکار اب بھی جمع کرائی گئی رپورٹ پر قائم ہے تو اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

مختصر وقفے کے بعد عدالتی کارروائی دوبارہ شروع ہونے پر راولپنڈی کے سی سی پی او نے عدالت میں دو بار معافی مانگی۔

دریں اثناء جسٹس مرزا نے آئندہ سماعت پر کمشنر راولپنڈی کو طلب کرتے ہوئے انٹیلی جنس بیورو (آئی بی) کے ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی)، موٹروے آئی جی اور ایڈیشنل ہوم سیکرٹری سے پی ٹی آئی کے احتجاج اور دھرنوں سے متعلق رپورٹ طلب کر لی۔

مزید یہ کہ عدالت نے ڈی جی آئی بی کو ہدایت کی کہ وہ اپنی رپورٹ میں احتجاج کے بعد کی صورتحال بیان کریں، اور سی پی او راولپنڈی اور ڈپٹی کمشنر کو حکم دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ احتجاج کی وجہ سے شہریوں کو کسی قسم کی تکلیف کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت 23 نومبر تک ملتوی کر دی۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button