قومی اسمبلی نے وزراء، وی آئی پیز کے لیے مفت حج کی سہولت ختم کر دی۔

اس سال کے حج کے اختتام کے موقع پر 11 جولائی 2022 کو مقدس سعودی شہر مکہ میں نمازی الوداعی طواف (طواف) کرتے ہیں۔  — اے ایف پی/فائل
اس سال کے حج کے اختتام کے موقع پر 11 جولائی 2022 کو مقدس سعودی شہر مکہ میں نمازی الوداعی طواف (طواف) کرتے ہیں۔ — اے ایف پی/فائل

اسلام آباد: قومی اسمبلی کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) نے جمعرات کو وزرا، بیوروکریٹس، خدام اور وی آئی پیز کے لیے مفت حج کی سہولت ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پی اے سی کے چیئرمین نور عالم خان نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے اعلان کیا کہ این اے باڈی مفت حج کی سہولت ختم کر دے گی۔ سرکاری افسران اور خدام

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم، وزراء اور کسی سیاسی شخصیت سمیت ہر کسی کو مفت حج کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

دریں اثنا، پی اے سی نے متعلقہ وزارت اور اکاؤنٹنٹ جنرل پاکستان ریونیو (اے جی پی آر) سے 15 دن کے اندر اندر ان لوگوں کی تفصیلات بھی طلب کیں جو اپنا ایک پیسہ خرچ کیے بغیر حج کر رہے تھے۔

پی اے سی کے مطابق ملک قرضوں کے بوجھ تلے دبا ہوا ہے۔ غریب ٹیکس ادا کر رہے ہیں جبکہ سرکاری افسران مفت حج کی سہولت سے لطف اندوز ہو رہے ہیں۔

حکومت ان افسران سے رقم وصول کرے گی جن کے اہل خانہ نے مفت حج کیا اور پھر یہ رقم قومی خزانے میں جمع کرائی جائے گی، خان نے وعدہ کیا کہ مفت حج کی سہولت کو ٹیکس دہندگان پر ایک "بوجھ” قرار دیا۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button