عدالت نے ایاز امیر کو جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

Urdupoint_2

اسلام آباد کی ایک عدالت نے اتوار کے روز سینئر صحافی ایاز امیر کا ایک روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا جسے جمعے کو ان کی بہو کے گھر سے قتل ہونے کے بعد گرفتار کیا گیا تھا۔

37 سالہ مقتولہ سارہ بی بی کو شبہ ہے کہ اسے اس کے شوہر ایاز امیر کے بیٹے شاہنواز نے قتل کیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سارہ اور شاہنواز کا جمعرات کی رات گھریلو مسئلے پر جھگڑا ہوا جس کے نتیجے میں اس کی موت ہوگئی کیونکہ ملزم نے مبینہ طور پر اس کے سر میں لوہے کے ڈمبل سے مارا تھا۔

بیوی کو قتل کرنے کے بعد ذرائع نے انکشاف کیا کہ ملزم نے مبینہ طور پر اس کی لاش کو باتھ ٹب میں ڈال دیا۔ پولیس ملزم کو گرفتار کر کے مزید تفتیش کے لیے تھانہ شہزاد ٹاؤن لے گئی۔

ذرائع نے مزید بتایا کہ شہزاد ٹاؤن پولیس نے بعد ازاں ایاز امیر کو مقدمے میں نامزد کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ شاہنواز سے پوچھ گچھ کی روشنی میں پولیس نے ہفتہ کو علاقہ مجسٹریٹ سے ایاز امیر کے وارنٹ گرفتاری حاصل کیے تھے۔

سینئر صحافی کو آج علاقہ مجسٹریٹ زاہد ترمذی کے سامنے پیش کیا گیا تو انہوں نے استدعا کی کہ قتل کی اطلاع انہوں نے ہی پولیس کو دی تھی۔

عامر نے مزید کہا، "میں ہی تھا جس نے سٹیشن ہاؤس آفیسر (ایس ایچ او) کو فارم ہاؤس کا پتہ دیا تھا۔”

ان کے وکیل، ناصر اصغر نے یہ بھی کہا کہ عامر کو "مقدمہ میں نامزد نہیں کیا گیا” اور ان کے مؤکل کے خلاف "کوئی ثبوت نہیں ملا”۔

تاہم پولیس نے عدالت سے ملزم کے چار روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ملزم ایاز امیر سے تفتیش کی جائے۔

پولیس نے مزید کہا، "یہ ایک بہت ہی ہائی پروفائل کیس ہے،” کینیڈین نژاد پاکستانی خاتون کو قتل کر دیا گیا ہے۔

عدالت نے پولیس کی استدعا منظور کرتے ہوئے ملزم کو ایک روزہ جسمانی ریمانڈ پر حکام کے حوالے کر دیا۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button