بنگلہ دیش میں کشتی کے خوفناک حادثے میں 24 افراد ہلاک

Urdupoint_2

بنگلہ دیش میں اتوار کے روز ہندو عقیدت مندوں سے بھری ایک کشتی ڈوبنے سے کم از کم 24 افراد ہلاک اور درجنوں لاپتہ ہو گئے، ایک سال سے زائد عرصے میں ملک کو مارنے والی آبی گزرگاہوں کی بدترین تباہی میں۔

شمالی پنچ گڑھ کے ضلعی منتظم جہور الاسلام نے بتایا کہ اب تک برآمد ہونے والی لاشوں میں 12 خواتین اور آٹھ بچے شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ لاپتہ افراد کے لیے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔ فیری عقیدت مندوں کو ایک ہندو مندر تک لے جا رہی تھی۔

اسلام نے کہا کہ انہیں لاپتہ افراد کی صحیح تعداد کا علم نہیں ہے لیکن مسافروں کا کہنا ہے کہ جہاز میں 70 سے زائد افراد سوار تھے۔

پولیس نے بتایا کہ تقریباً 30 افراد اب بھی لاپتہ ہیں جبکہ کچھ مسافر تیر کر ساحل پر گرنے میں کامیاب ہو گئے۔

بنگلہ دیش میں فیری حادثات میں ہر سال سیکڑوں افراد ہلاک ہو جاتے ہیں، ایک نشیبی ملک جس میں وسیع اندرون ملک آبی گزرگاہیں ہیں اور حفاظتی معیارات کمزور ہیں۔

گزشتہ سال اپریل میں دارالحکومت ڈھاکہ کے باہر دریائے شیتلخشیا پر ایک مال بردار بحری جہاز سے ٹکرانے اور ڈوبنے سے کم از کم 26 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button