ایسے مالیکیول جو عمر بڑھنے کو ریورس کر سکتے ہیں۔

یروشلم کی عبرانی یونیورسٹی کے محققین کا کہنا ہے کہ انہیں مالیکیولز کا ایک گروپ ملا ہے جو وقت کے ساتھ ساتھ انحطاط پذیر خلیات کی مرمت کرتے ہیں۔ یہ دریافت ایک نئی گولی سے بھی منسلک ہے جو پارکنسنز یا الزائمر جیسی عمر سے متعلق بیماریوں سے بچاتی ہے۔

مطالعہ کرنے کے لیے، محققین نے انسانی خلیات کو نقصان سے بچانے کے لیے ایک دوا تیار کی، جو انسان کے ٹشوز کو طویل عرصے تک اپنے کام کو برقرار رکھنے کی اجازت دیتی ہے۔

مائٹوکونڈریا، سیل کے ‘پاور پلانٹس’ توانائی کی پیداوار کے لیے ذمہ دار ہیں۔ ان کا موازنہ چھوٹی برقی بیٹریوں سے کیا جا سکتا ہے جو خلیات کو صحیح طریقے سے کام کرنے میں مدد کرتی ہیں۔

"اگرچہ یہ ‘بیٹریاں’ مسلسل ختم ہوتی ہیں، ہمارے خلیات میں ایک نفیس طریقہ کار ہے جو خراب مائٹوکونڈریا کو ہٹاتا ہے اور ان کی جگہ نئی بیٹریاں لاتا ہے،” پروفیسر ایناو گراس نے ایک میڈیا ریلیز میں وضاحت کی۔

تاہم، یہ طریقہ کار ٹوٹ جاتا ہے جیسے جیسے لوگ بڑے ہوتے ہیں، جو سیل کی خرابی اور پارکنسنز، الزائمر اور دل کی خرابی جیسی بیماریوں کا باعث بن سکتے ہیں۔

ٹیم کو امید ہے کہ ان کی زبانی گولی کسی بیماری کے شروع ہونے سے پہلے سیلولر خرابی کو ٹھیک کرنے کے لیے روک تھام کے اقدام کے طور پر کام کر سکتی ہے۔

Yissum کے سی ای او Itzik Goldwaser نے کہا، "Ben-Sasson’s and Gross’s کے نتائج عالمی عمر رسیدہ آبادی کے لیے اہم اہمیت رکھتے ہیں۔

"جیسے جیسے Vitalunga پری کلینیکل اسٹڈیز کی طرف پیش قدمی کرتا ہے، وہ اس ناقابل برداشت بوجھ کو کم کرنے کے پہلے سے کہیں زیادہ قریب ہیں جو عمر بڑھنے سے متعلق بیماریوں، جیسے کہ الزائمر اور پارکنسنز، افراد، ان کے خاندانوں اور ہمارے صحت کی دیکھ بھال کے نظام پر پڑتے ہیں۔”

یہ مطالعہ آٹوفجی میں شائع ہوا تھا۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button