گیمبیا کی پولیس کی تحقیقات میں بچوں کی اموات کا تعلق ہندوستان میں بنائے گئے شربت سے ہے۔

گیمبیا میں گردے کی شدید چوٹ سے 69 بچوں کی موت کا تعلق ہندوستان میں بنائے گئے کھانسی کے چار شربتوں سے ہے جو امریکہ میں قائم دوا ساز کمپنی کے ذریعے مغربی افریقی ملک میں درآمد کیے گئے ہیں۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے تفتیش کاروں نے نئی دہلی میں قائم میڈن فارماسیوٹیکل لمیٹڈ کی چار مصنوعات میں ڈائی تھیلین گلائکول اور ایتھیلین گلائکول کی "ناقابل قبول” سطحیں پہلے ہی پائی تھیں، جو کہ زہریلے ہو سکتے ہیں۔

منگل کو پولیس کی رپورٹ میں میڈن کا نام براہ راست نہیں لیا گیا لیکن کمپنی کی وہی چار مصنوعات درج ہیں جن کا ذکر ڈبلیو ایچ او نے کیا تھا: پرومیتھازائن اورل سولیوشن، کوفیکسمالن بیبی کف سرپ، مکوف بیبی کف سرپ اور میگریپ این کولڈ سرپ۔

پولیس رپورٹ کے مطابق، اٹلانٹا میں قائم اٹلانٹک فارماسیوٹیکل کمپنی لمیٹڈ، جسے گیمبیا میں ادویات برآمد کرنے کی اجازت ہے، نے ان شربتوں کی مجموعی طور پر 50,000 بوتلوں کا آرڈر دیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ "یہ ثابت ہوا ہے کہ آلودہ بچوں کے شربت کی 50,000 بوتلوں کی مذکورہ رقم سے، 41,462 بوتلوں کو قرنطینہ/ ضبط کیا گیا ہے اور 8,538 بوتلیں بے حساب رہیں،” بیان میں مزید کہا گیا کہ تحقیقات جاری ہیں۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button