ممنوعہ فنڈنگ ​​کیس: IHC نے عمران خان کی 18 اکتوبر تک ضمانت منظور کر لی

اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) نے بدھ کو پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان کی وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کے خلاف درج مقدمے میں حفاظتی ضمانت منظور کر لی۔

عمران کی عدالت میں پیشی کے بعد 18 اکتوبر تک 5 ہزار روپے کے ضمانتی مچلکوں پر ضمانت منظور کی گئی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس (سی جے) اطہر من اللہ نے عمران کو حفاظتی ضمانت کی درخواست کی سماعت کے درمیان آج پہلے طلب کیا تھا۔

عمران نے 6 اکتوبر کو اسلام آباد میں ایف آئی اے کے کمرشل بینک سرکل کی جانب سے ان کے اور پی ٹی آئی کے دیگر رہنماؤں کے خلاف فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) درج کرنے کے بعد ضمانت کی درخواست کی تھی۔

سماعت کے آغاز پر پی ٹی آئی چیئرمین کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ عمران خان کی گرفتاری کا خطرہ ہے۔

اس پر IHC کے چیف جسٹس نے وکیل سے پوچھا کہ ان کا موکل کہاں ہے اور وہ عدالت میں کیوں پیش نہیں ہوئے۔

وکیل نے جج سے کہا کہ اگر عدالت حکم دیتی ہے تو عمران خان فوری طور پر پیش ہوں گے۔

یہ سن کر IHC چیف جسٹس نے وکیل سے کہا کہ وہ اپنے موکل کو آج سہ پہر 3 بجے پیش ہونے کو کہیں۔

تاہم وکیل نے کہا کہ بہت دیر ہو جائے گی اور ان کے موکل 30 منٹ میں عدالت آ سکتے ہیں۔

عدالت نے پولیس کو پی ٹی آئی سربراہ کو عدالت میں پیش ہونے تک گرفتار کرنے سے بھی روک دیا اور پولیس کو انہیں ہراساں کرنے سے روک دیا۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button