پاکستان مذاکرات کے لیے تیار ہے، لیکن بھارت کو خلوص کا مظاہرہ کرنا چاہیے، شہباز شریف

وزیر اعظم شہباز شریف قازقستان کے شہر آستانہ میں ایشیا میں انٹرایکشن اور اعتماد سازی کے اقدامات پر کانفرنس کے چھٹے سربراہی اجلاس سے خطاب کر رہے ہیں۔  - بشکریہ ریڈیو پاکستان
وزیر اعظم شہباز شریف قازقستان کے شہر آستانہ میں ایشیا میں انٹرایکشن اور اعتماد سازی کے اقدامات پر کانفرنس کے چھٹے سربراہی اجلاس سے خطاب کر رہے ہیں۔ – بشکریہ ریڈیو پاکستان

وزیر اعظم شہباز شریف کا کہنا ہے کہ پاکستان علاقائی امن اور خوشحالی کے لیے بھارت کے ساتھ بامعنی مذاکرات کی توقع رکھتا ہے لیکن یہ بھارت پر منحصر ہے کہ وہ ایشیا میں پائیدار امن کے لیے کردار ادا کرے اور دکھائے۔ اخلاص اس طرح کے معنی خیز مکالمے کی طرف۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنی آنے والی نسلوں کے لیے پرامن ماحول چاہتا ہے۔

وزیر اعظم تھے۔ خطاب جمعرات کو آستانہ، قازقستان میں ایشیا میں باہمی تعامل اور اعتماد سازی کے اقدامات پر کانفرنس کا چھٹا سربراہی اجلاس۔

"میں اپنے ہم منصبوں، ہندوستانیوں کے ساتھ سنجیدہ بات چیت اور بات چیت کے لیے بالکل تیار اور تیار ہوں، بشرطیکہ وہ مقصد کے لیے خلوص کا مظاہرہ کریں اور وہ یہ ظاہر کریں کہ وہ ایسے مسائل پر بات کرنے کے لیے تیار ہیں جنہوں نے ہمیں کئی دہائیوں سے واقعی ایک فاصلے پر رکھا ہوا ہے”۔ شہباز نے کہا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی مظالم کے خاتمے تک مقبوضہ کشمیر میں امن قائم نہیں ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں جمہوریت کا دعویٰ کرنے کے لیے فوجی طاقت کا استعمال کر رہا ہے اور مقبوضہ وادی کے عوام کو ان کے حق خودارادیت سے محروم کر رکھا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ بھارت گزشتہ سات دہائیوں سے ان پر ظلم ڈھا رہا ہے۔

پاکستان میں سیلاب کے بارے میں بات کرتے ہوئے، وزیر اعظم نے حالیہ تباہ کن بارشوں اور سیلاب سے متاثر ہونے والے ملک کے 33 ملین موسمیاتی پناہ گزینوں کی بحالی کے لیے فوری مدد کی ضرورت کو اجاگر کیا۔

انہوں نے کہا کہ "پاکستان ایک زبردست آب و ہوا کی وجہ سے جی رہا ہے،” انہوں نے مزید کہا کہ بے مثال بارشوں اور سیلاب نے پاکستان کا ایک تہائی حصہ ڈوب دیا ہے اور یہ سب گلوبل وارمنگ اور موسمیاتی تبدیلی کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ابتدائی اندازوں کے مطابق اس آفت سے تیس ارب ڈالر سے زائد کا نقصان ہوا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت نے بچاؤ، راحت اور بحالی کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے ہیں۔

وزیر اعظم شہباز نے کہا کہ اگرچہ پاکستان عالمی کاربن کے ایک فیصد سے بھی کم اخراج کا ذمہ دار ہے لیکن ہم ان دس ممالک میں شامل ہیں جو موسمیاتی تبدیلی سے سب سے زیادہ متاثر ہیں۔

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button