وزارت داخلہ نے ای سی پی کو مشورہ دیا کہ دہشت گردی کی کارروائیوں کے خطرے کے پیش نظر ضمنی انتخابات ‘احتیاط سے’ کرائے جائیں

ووٹ ڈالنے والی خواتین کی ایک نمائندہ تصویر۔  - اے پی پی
ووٹ ڈالنے والی خواتین کی ایک نمائندہ تصویر۔ – اے پی پی

اسلام آباد: وزارت داخلہ نے جمعرات کو الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کو ضمنی انتخابات کے دوران دہشت گردی کی کارروائیوں کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے انتخابات کو "محتاط” انداز میں کرانے کا مشورہ دیا۔

16 اکتوبر کو آٹھ حلقوں این اے 22 مردان، این اے 24 چارسدہ، این اے 31 پشاور، این اے 45 کرم، این اے 108 فیصل آباد، این اے 118 ننکانہ صاحب، این اے 237 ملیر میں ضمنی انتخابات ہوں گے۔ اور این اے 239 کراچی۔

اس ماہ کے شروع میں، وزارت نے کمیشن کو ایک خط لکھا تھا جس میں 90 دن کی تاخیر کا مطالبہ کیا گیا تھا کیونکہ سیکیورٹی اہلکار سیلاب سے متعلق امدادی کاموں میں مصروف تھے اور خدشہ ظاہر کیا گیا تھا کہ ایک مخصوص جماعت وفاقی دارالحکومت کا "محاصرہ” کر لے گی۔

وزارت کے خط میں کہا گیا ہے کہ "اس بات کا خدشہ ہے کہ پنجاب میں آنے والی سیاسی قیادت کو نشانہ بنایا جائے گا۔ ضمنی انتخابات محتاط انداز میں کرائے جائیں”۔

خط میں کہا گیا ہے کہ سندھ اور بلوچستان سے تعلق رکھنے والی قوم پرست جماعتیں کراچی میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہوسکتی ہیں جہاں 23 اکتوبر کو بلدیاتی انتخابات ہوں گے۔

وزارت نے کہا کہ ضمنی انتخابات کے دوران امن و امان کی صورتحال پر قابو پانا اکیلے پولیس کے لیے ممکن نہیں ہو گا اور مسلح افواج کے ساتھ ساتھ دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے بھی سیلاب سے نمٹنے کے کاموں میں مصروف ہیں۔

وزارت نے مزید کہا کہ کچھ صوبوں میں پولیس کے اقدامات نے جانبداری کا مظاہرہ کیا۔ اس کے علاوہ، اس نے نوٹ کیا کہ فی الحال، ملک کا سیاسی درجہ حرارت بہت زیادہ ہے اور "تمام سیاسی جماعتوں کے کارکنوں کو چارج کیا جاتا ہے”۔

پیروی کرنے کے لیے مزید…

اردو پوائنٹ 2

اردو پوائنٹ 2 پاکستان کو بہترین نیوز پبلیشر سنٹر یے۔ یہاں آپ پاکستانی خبریں، انٹرنیشنل خبریں، ٹیکنالوجی، شوبز، اسلام، سیاست، اور بھی بہیت کہچھ پڑھ سکتے ہیں۔

مزیز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button